تحریر: زارا رفیق

آج اگر میں خاموش رہی تو کل کوئی اور میری بہن کی طرح قتل کی جائے گی۔
کل کوئی اور خاندان ہماری طرح سڑکوں پر بیٹھ کر دھرنا دے رہی ہوگی۔
میں ریاستِ پاکستان قانون ساز اداروں سے پوچھنا چاہتی ہوں کہ یہاں حق کی بات کرنا کیوں جرم ہے؟
پاکستان میں کیوں حق مانگنے کے لئے لوگوں کو دھرنے دینے کی ضرورت پیش آتی ہے۔؟

ریاستِ پاکستان میں پہلے تو مجرم کو پکڑنے کیلئے احتجاج کرو، اگر غلطی سے وہ پکڑا گیا تو بعد میں اُسے سزا دینے کہ لئے بھی دھرنے دینا پڑتا۔
کیا پاکستان میں انصاف کا نام دھرنا ہے؟
کیا پاکستان میں دھرنے دینے سے انصاف ملتا ہے؟
عجیب ہے اس پاکستان کی قانون۔۔!

میری بہن کو قتل ہوئے 30 دن گزر گئے، مگر ابھی تک مجرم محراب گچکی اور صمید پنجگوری آزاد ہیں۔
حیرت کی بات یہ ہے کہ محراب گچکی کیسے ایک لاش کو سیول اسپتال میں چھوڑ کر فرار ہوگیا؟
کیا وہاں پولیس موجود نہیں تھا؟
کیا وہاں کوئی بھی ڈاکٹر موجود نہیں تھا کہ رپورٹ کر لیتا؟
وہ فرار کیسے ہوگیا؟
میں کیسے مان لوں کہ محراب گچکی وہاں سے با آسانی فرار ہو گیا بنا کسی کی مدد کے؟؟

مجھے اب ایسا لگتا ہے کہ تربت کی پولیس اور انتظامیہ سب مجرموں سے ملے ہوئے ہیں، وگرنہ محراب گچکی ابھی تک آزاد نہیں گھومتا۔۔۔
ایک معمولی شخص کا پاکستان کی نام نہاد قانون سے بھاگنا کیسے ممکن ہے؟
نہیں یہ نا ممکن ہے!
میں یہ مان نہیں سکتی ہوں
میری ذہین اس بات کو تسلیم کرنے کہ لئے تیار نہیں ہے۔

اللہ تعالٰی قرآن مجید میں فرماتا ہے کہ:

یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا عَلَیۡکُمۡ اَنۡفُسَکُمۡ ۚ لَا یَضُرُّکُمۡ مَّنۡ ضَلَّ اِذَا اہۡتَدَیۡتُمۡ ؕ اِلَی اللّٰہِ مَرۡجِعُکُمۡ جَمِیۡعًا فَیُنَبِّئُکُمۡ بِمَا کُنۡتُمۡ تَعۡمَلُوۡنَ ﴿۱۰۵﴾
ترجمہ:-
جب لوگوں کا حال یہ ہوجائے کہ وہ برائی کو دیکھیں اور اسے بدلنے کی کوشش نہ کریں، ظالم کو ظلم کرتے ہوئے پائیں اور اس کا ہاتھ نہ پکڑیں، تو بعید نہیں کہ اللہ اپنے عذاب میں سب کو لپیٹ لے۔ خدا کی قسم ! تم کو لازم ہے کہ بھلائی کا حکم دو اور برائی سے روکو، ورنہ اللہ تم پر ایسے لوگوں کو مسلط کر دے گا جو تم میں سب سے بدتر ہوں گے اور وہ تم کو سخت تکلیفیں پہنچائیں گے، پھر تمہارے نیک لوگ خدا سے دعائیں مانگیں گے، مگر وہ قبول نہیں ہوں گے۔

میں ریاست سے درخواست کرنے سے قاصِر ہوں۔
اب میں انسانی حقوق کہ تنظیموں اور اپنی بلوچ بہن بھائیوں سے درخواست کرتی ہوں کہ وہ اس جنگ میں ہمارا ساتھ دیں اور انصاف دلانے میں ہماری مدد کریں تاکہ خدا ناخواستہ کل کوئی اور ہماری جگہ نہ ہو۔
کل کوئی اور شاہینہ قتل نا ہو۔
کل کوئی اور ننھی برمش یتیم نہ ہو۔
کل کوئی اور کلثومہ شہید نہ ہو۔
کل کوئی اور حیات کی طرح اپنے ماں باپ کہ سامنے گولیوں سے چھلنی نہ ہو۔
کل کوئی اور حنیف گولیوں کا شکار نہ ہو۔
کل کوئی اور ان جیسے ظالموں کا شکار نہ ہو۔
خدارا اب بس کریں، ظلم اور ظالم کے خلاف آواز اٹھائیں۔

#JusticeForShaheenaShaheen

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *